جوبالوں کو سفید ہونے دے نہ کبھی گرنے دے

کچھ لوگوں کے بال وقت سے پہلے ہی سفید ہوجاتے ہیں اور کچھ کے جلد گر جاتے ہیں لیکن اگرآپ سر میں ناریل کا تیل لگائیں تو اس طرح کے مسائل سے بچا جاسکتا ہے۔

ناریل کے تیل میں کاربوہائیڈریٹس،وٹامنزاور منرلز پائے جاتے ہیں جس کی وجہ سے یہ سر کی جلد کے لئے بہت ہی زیادہ مفید ہے اور سر میں موجود خشکی،جوﺅں اورروکھا پن کو ٹھیک کرتا ہے۔اگر آپ ناریل کے تیل میں کڑی پتا ڈال کر ابالیں اور اسے سر میں لگائیں تو اس کی وجہ سے بال گنا بند ہوجائیں گے۔اسی طرح اگر لیموں پانی اور ناریل کے تیل کو ملاکر سر میں لگانے سے بھی بال گرنا کم ہوجائیں گے۔

ناریل کے تیل کو سر میں لگانے سے نمی بخارات بن کر نہیں اڑتی اور سر تر رہتا ہے جس کی وجہ سے بال روکھے اور بے جان نہیں ہوتے۔جن لوگوں کو سر میں بے پناہ پسینہ آتا ہے اگر وہ سر میں ناریل کا تیل لگائیں تو ان کا سر ٹھنڈا رہے گا اور پسینہ آنا بھی کم ہوجائے گا۔

اگرآپ سر میں سفید بالوں کی وجہ سے پریشان ہیں تو رات کو سونے سے قبل ناریل کے تیل کو تھوڑا سا گرم کریںاور اس میں نیاز بو(لیونڈر)کا تیل شامل کریں۔اس تیل کے مکسچر کو رات کو سر میں لگائیں اور اگلے دن دھولیں۔آپ اس عمل کو تب تک دہراسکتے ہیں جب تک آپ کو مطلوبہ نتائج نہ مل جائیں
اگر تو آپ کو دہی کھانا پسند ہے تو اچھی خبر یہ ہے کہ اس عادت کے باعث آپ ہائی بلڈ پریشر جیسے خاموش قاتل سے بچ سکتے ہیں۔یہ بات امریکا میں ہونے والی ایک نئی طبی تحقیق میں سامنے آئی۔بوسٹن یونیورسٹی اسکول آف میڈیسین کی تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ جو خواتین ایک ہفتے میں 5 یا اس سے زائد بار دہی کھاتی ہیں، ان میں ہائی بلڈ پریشر کے مرض کا امکان کم ہوتا ہے۔اس تحقیق کے دوران لاکھوں افراد کے ڈیٹا کا تجزیہ کرکے یہ دریافت کیا گیا کہ دہی کا ہفتے میں کئی بار استعمال ہائی بلڈ پریشر کا خطرہ 20 فیصد تک کم کردیتا ہے۔تحقیق میں دہی کے استعمال کے اثرات خواتین پر زیادہ مرتب ہوئے جس کی وجہ مردوں کی جانب سے اسے کم کھانا ہے۔محققین کے مطابق اگر دہی میں پھل، سبزیاں، بیج یا گریاں وغیرہ شامل کرلیے جائیں تو اس کا فائدہ بھی بڑھ جاتا ہے اور ہائی بلڈ پریشر کا خطرہ 31 فیصد تک کم ہوجاتا ہے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ کوئی بھی غذا جادوئی نہیں ہوتی مگر اپنی خوراک میں دہی کا استعمال کرکے طویل المعیاد بنیادوں پر ہائی بلڈ پریشر کا خطرہ کم کیا جاسکتا ہے۔تحقیق میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ دودھ سے بنی مصنوعات کا روزانہ استعمال خاص طور پر دہی ہائی بلڈ پریشر کی تشکیل کا خطرہ کم کرتا ہے تاہم ایسا کیوں ہوتا ہے اس کی وضاحت نہیں کی گئی۔تاہم ماضی میں کی جانے والی تحقیق میں یہ بات سامنے آئی تھی کہ دہی میں موجود بیکٹریا کولیسٹرول کو کم کرنے میں مددگار ثابت ہوتا ہے جو کہ خون کی شریانوں کو تنگ کرکے ہائی بلڈ پریشر کا سبب بنتا ہے۔یہ تحقیق امریکن ہارٹ ایسوسی ایشن کی کانفرنس میں پیش کی گئی:۔

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں